معاشرہ

ایک بدترین سانحہ

Sialkot Incident
ایک بدترین سانحہ

سیالکوٹ میں جو کچھ ہوا ہے وہ قابل مذمت ہے۔ دین اسلام کے ناموافق اور انسانیت کو شرما دینے والا واقعہ تھا۔ یقیناً یہ ایک بدترین سانحہ تھا۔اسلام میں اور اسلامی جمہوریہ پاکستان میں کسی ایسے واقعے کی قطعی گنجائش نہیں ہے۔اس واقعے کی باریک بینی سے تحقیق و تفتیش ہونی چاہیے اور مجرموں کو سخت سزائیں ملنی چاہیئں۔

ہم مسلمان ہیں اور ایک آزاد مملکت اسلامی جمہوریہ پاکستان کے شہری ہیں۔ہم ایک ایسے مذہب کے پیروکار ہیں جس کا نام اسلام ہے ،اسلام کی معنی سلامتی کی ہیں ۔ اسلام اللہ اور رسول کی اطاعت کا نام ہے۔اللہ تعالی کا ایک بہت ہی بابرکت اسم رب العالمین ہے تو ہمارے نبی کا اسم مبارک رحمتہ اللعالمین ہے۔
شاید جب تک ہم اللہ اور اس کے حبیب کے ان دو اسمائے گرامی کو یاد رکھیں گے ہم بہت سے مسائل میں الجھنے سے محفوظ رہیں گے۔کیوں کہ یہ صرف اسماء نہیں بلکہ ایک سبق ہیں۔جب تک یہ اسمائے ہمارے زیز نگاہ و فکر رہیں گے ہم تکبر و غرور میں مبتلا نہیں ہوں گے۔

ہم یہ سمجھنا اور قبول کرنا ہوگا کہ اللہ تعالی رب العالمین ہے یعنی وہ پوری دنیا کا رب ہے،خالق اور مالک ہے،پوری دنیا کو اسی نے پیدا کیا،تمام انسانوں کو اسی نے پیدا کیا پھر چاہے کوئی مسلم ہے یا غیرمسلم۔ وہی سب کو کھلاتا اور پلاتا ہے۔ غیر مسلموں کا اور مسلمانوں کا رب ایک ہی ہے اور جو مسلمانوں کا رب ہے وہی غیر مسلموں کا رب بھی ہے۔ وہ صرف مسلمانوں کا نہیں بلکہ غیر مسلموں کا بھی خالق و مالک وہی ہے۔ جس طرح مسلمان اس کے بندے ہیں اسی طرح غیر مسلم بھی اسی کے بندے ہیں۔

ہمیں یہ سمجھنا اور قبول کرنا ہوگا کہ رحمتہ اللعالمین ہمارے ہی نبی کا ایک لقب ہے۔ یہ ہمارے نبی کا صرف لقب نہیں بلکہ صفت ہے۔اسی صفت کے باطن میں حضورﷺ کی مکمل سیرت ہے۔ حضورﷺ سب کے نبی ہیں ۔وہ جس طرح مسلمانوں کے نبی ہیں اسی طرح غیر مسلموں کے بھی نبی ہیں۔وہ جس طرح عربوں کے نبی ہیں اسی طرح عجم کے نبی ہیں،وہ کالوں اور گوروں سب کے نبی ہیں ۔ وہ اس کے بھی نبی ہیں انہیں مانتا ہے وہ اس کے بھی نبی ہیں جو ان سے انجان ہے جو ان سے ناواقف ہے۔ جو اس عظیم ذات کو ماننے والے ہیں انہیں چاہیے کہ وہ ان کی بتائی ہوئی راہ پر آجائیں اور اپنے عمل سے بتائیں کہ ہاں ہم اس پیغمبر کر ماننے والے ہیں جو رحمتہ اللعالمین ہے۔

اگر ہم حقیقی معنوں میں اللہ تعالی کو میں رب العالمین اور ہمارے نبی حضرت محمد ﷺ کو رحمتہ اللعالمین تسلیم کرلیں تو شاید سیالکوٹ سانحہ جیسے دردناک سانحے مستقبل میں رونما نہ ہوں۔

تحریر: لعل ڈنو شنبانی

لعل ڈنو شنبانی
+ posts

ضروری نوٹ

الف نگری کی انتظامیہ اور ادارتی پالیسی کا اس مصنف کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر میں پھیلے کروڑوں قارئین تک پہنچے تو قلم اٹھائیے اور 500 سے 700 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ  ہمیں ای میل کریں۔ آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

Email: info@alifnagri.net, alifnagri@gmail.com

 

About the author

لعل ڈنو شنبانی

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.